ہمبستری کب کرنی چائیے

ہمبستری کب کرنی چائیے

ہمبستری کب کرنی چائیے

جب گرمی بڑھی ہوتی ہے تو پیاس کی زیادتی ہوتی ہے گرمی معلوم ہوتی ہے جب سردی بڑھی ہوتی ہے تو رطوبت کی زیادتی کی صورت میں اعضاء میں گرانی بھی ہوتی ہے اور خشکی کی حالت میں میں نیند کم آتی ہے جب دونوں کیفتیں بڑھی ہوئی ہوں تو دونوں کی علامات پائی جاتی ہیں ۔

ہمبستری کے لئے مناسب فعل و وقت

ہمبستری کے لئے گرمی کے مقابلہ میں سردی کا موسم اور دن کے مقابلہ میں رات کو وقت زیادہ مناسب ہوتا ہے کیونکہ ان اوقات میں طبیعت میں سکون ہوتا ہے نیز اس بناء پر کہ بدن کے باہر کام کرنے والی قوتیں دیکھنے ،سننے ،سونگھنے ،چکھنے اور چھونے والی رات کو بدن کے اندرونی حصہ میں جمع ہو جاتی ہیں اور شب میں قوت باہ زیادہ ہوتی ہے ۔

شب میں بھی آدھی شب گزرنے کے بعد غذا کھانے کے تین چار گھنٹے بعد ہمبستری کرنا زیادہ بہتر ہے کیونکہ اس وقت ہضم معدی ختم ہو کر جگر کی طرف غذا جزب ہونا شروع ہو جاتی ہے ۔

ہمبستری کے لئے تیاریاں

جس دن ہمبستری کا ارادہ ہو اسی دن مقوی اور محرک باہ مردانہ قوت کو حرکت میں لانے والی غذائیں استعمال کرنی چائیے تاکہ حظ و لطف کامل حاصل ہو نیز محنت رنج و غم جیسے خشکی بڑھانے والے اسباب سے بچنا چائیے ۔

http://ummulshifa.com/products.php

Share Button