Skip to content

اُم لشفاء ہربل فارما رجسٹرڈ

اورجب میں بیمار ہوتا ہوں تو وہ ( اللہ ) مجھے شفا دیتا ہے
Helpline: 0092-334 7405881, skype: ummulshifaherbal
نسخہ خاص جریان و سرعت انزال

نسخہ خاص جریان و سرعت انزال

نسخہ خاص جریان و سرعت انزال

یہ نسخہ جریان و سرعت انزال کے لئے مجرب ہے اور مادہ تولید کو ازسر نو پیدا اور گاڑھا کرتا ہے مگر قبض کرتا ہے لہزا قبض کے لئے کوئی قبض کشا دوا لیں ۔

نسخہ خاص جریان و سرعت انزال

نسخہ اُم لشفاء ۔

دیسی مرغی کے بیس انڈوں کو اُبال کر ان کی زردی اچھی طرح ہاتھوں سے ریزہ ریزہ کر کے 300 گرام شہد کا قوام کر کے اس میں اچھی طرح حل کر لیں کہ معجون سی بن جائے پھر اس میں عقرقرحا اصلی لونگ اور سونٹھ ہر ایک 35 گرام باریک کر کے چھان لیں اور اس میں ملا لیں ۔ continue reading…

Share Button
مقوی باہ مغلظ منی کا دیسی علاج

مقوی باہ مغلظ منی کا دیسی علاج

مقوی باہ مغلظ منی کا دیسی علاج

پیاز اور اس کے تخم دونوں ہی قوت باہ کے بڑھانے میں بے نظیر ہیں ان کے اندر ضروری وٹامن بکشرت پائے جاتے ہیں جو بدن کو قوت پہنچانے میں بے مشل ہیں

مقوی باہ مغلظ منی کا دیسی علاج

نسخہ اُم لشفاء

ماش کی دال ایک پاؤ کسی کانچ یا چینی کے برتن میں ڈال کر اس پر پیاز کا عرق ( اگر سفید پیاز ہو تو بہتر ہے ) اس قدر ڈالیں کہ دال اچھی طرح تر ہو جائے ایک دن اور رات اس کو بھیگا رہنے دیں پھر سایہ میں خشک کر لیں اور اس طرح سات بار تر اور خشک کر کے آٹے کی طرح باریک پیس کر رکھ لیں۔ continue reading…

Share Button
غسل جنابت کا طریقہ

غسل جنابت کا طریقہ

غسل جنابت کا طریقہ

جب رات کو میاں بیوی ہم بستر ہوں تو صبح کو نماز فجر سے پہلے پہلے اور اگر دن میں یہ عمل ہو تو اگلی نماز سے پہلے پہلے مرد و عورت دونوں کو غسل کرناضروری ہے ۔ اسی غسل کو غسل جنابت اور غسل نہ کرنے تک ناپاکی کی حالت میں رہنے کو حالت جنابت یا جنبی ہونا کہتے ہیں ۔

غسل جنابت میں بہت اہتمام کی ضرورت ہے مرد عورت دونوں ہی اپنے جنسی اعضاء کی صفائی میں احتیاط سے کام لیں مرد اپنے عضو کو اچھی طرح دھوئے کہیں ایسا نہ ہو کہ کھال میں منی جمی رہ جائے اور اسی طرح اپنی شرم گاہ کی اچھی طرح صفائی کرے غسل سے پہلے پیشاب کر لینا بھی بہتر و مناسب ہے ۔ ان مقامات ناپاکی کو دھونے کے بعد وضو کر لے پھر تمام بدن پر پانی ڈال کر ہاتھ سے اچھی طرح ملے تا کہ جسم کا کوئی حصہ خشک نہ رہ جائے بالوں کی جڑوں تک پانی پہنچ جائے ، بغلیں ، ناف ،اور کان کے سوراخ تک باہر کا حصہ پانی سے تر ہو جائے اس کے بعد سارے جسم پر پانی بہائے

غسل میں تین فرض ہیں

غسل جنابت کا طریقہ

منہ بھر کر کلی یا غرارہ کرنا

ناک کے نرم حصہ تک پانی پہنچانا

پورے جسم پر ایک بار اس طرح پانی بہانہ کہ بال برابر حصہ بھی خشک نہ رہے اور یہ تینوں عمل تین تین بار کرنا سنت ہے ۔

سوتے میں احتلام ہو جائے یا جاگنے کی حالت میں بغیر صحبت کے انزال ہو جائے یا محض بوس و کنار کی حالت میں ہی شہوت کے ساتھ منہ خارج ہو جائے تو بھی غسل فرض واجب ہو جاتا ہے عورت کی فرج میں مرد کا عضو خاص داخل ہونے پر خواہ انزال نہ بھی ہو غسل واجب ہو جاتا ہے ۔

جو عورتیں یا مرد نماز پنج گانہ کے عادی نہیں ہیں محض کاہلی یا جھوٹی شرم و حیاء سے غسل جنابت کئے بغیر کئی کئی دن گزار دیتے ہیں یہ بڑی نحوست اور بے برکتی کی بات ہے جنبی کے گھر سے رحمت کے فرشتے بھی دور رہتے ہیں ۔

Share Button
بیوی سے زیادہ عرصہ تک علیحدہ رہنے کی ممانعت

بیوی سے زیادہ عرصہ تک علیحدہ رہنے کی ممانعت

بیوی سے زیادہ عرصہ تک علیحدہ رہنے کی ممانعت

چار ماہ سے زیادہ بیوی سے علیحدگی اور صحبت نہ کرنے کو علماء نے منع فرمایا ہے کیونکہ عورت میں قوت صبر چار ماہ سے زیادہ نہیں ہوتی ہے جیسا کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے ساتھ پیش آئے واقعہ سے پتہ چلتا ہے جو اس طرح پر ہے کہ ایک بار امیر المومنین حضرت عمر رضی اللہ عنہ رات کو مدینہ کی گلیوں میں گشت کر رہے تھے تو ایک مکان سے کسی جوان عورت کے گانے کی آواز سنی جو کچھ عشقیہ اشعار گا رہی تھی جن کا مفہوم کچھ اس طرح تھا کہ خدا کی قسم مجھے خوف خدا نہ ہوتا تو آج چار پائی کی چولیں چرچرانے لگتیں امیر المومنیں کو اشعار سن کر کچھ شک ہوا اور دروازہ کھولنے کا حکم دیا اور جب دروازہ نہیں کھولا تو آپ دیوار پھاند کر اندر داخل ہوئے تو وہاں صرف ایک عورت کو پایا کوئی مرد نہ تھا دریافت کرنے پر عورت نے بتایا کہ اس کا شہر کافی عرصہ سے جہاد میں گیا ہوا ہے جس کی جدائی میں بے چین ہو کر وہ یہ اشعار گا رہی تھی یہ سن کر حضرت عمر رضی اللہ تعالیٰ عنہ اپنی صاحبزادی کے پاس تشریف لے گئے اور ان سے فرمایا کہ بغیر شرم و لحاظ کے بتاؤ کہ شادی شدہ عورت بغیر شوہر کے کتنے دن صبر کر سکتی ہے جواب میں اُم المومنین نے نیچی نگاہوں سے ہاتھ کی چار انگلیاں اٹھا دیں جس سے آپ سے سمجھ لیا کہ عورت بغیر شوہر کے چار ماہ تک صبر کر سکتی ہے پس آپ نے جہاں جہاں اسلامی لشکر جہاد پر تھے حکم نامے جاری فرمائے کہ شادی شدہ فوجیوں کو چار ماہ ہونے پر اپنے گھر جانے کی اجازت دی جائے ۔

بیوی سے زیادہ عرصہ تک علیحدہ رہنے کی ممانعت

مسئلہ :  اگر عورت اپنے شوہر کے چار ماہ سے زائد عرصہ تک دور رہنے پر راضی ہو جائے تو چار ماہ سے زائد علیحدگی میں بھی کوئی مضائقہ  نہیں بلکہ ایک سال بھی اگر شوہر قریب نہ جائے تو جائز ہے ۔

Share Button
شہد کے فوائد

شہد کے فوائد

شہد کے فوائد

ابو نعیم نے حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت کیا ہے کہ رسول اللہ ﷺ کے نزدیک شہد بہت پیارا اور عزیز ہے ۔

رسول اللہ ﷺ کو شہد اس لئے زیادہ محبوب تھا کہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ اس میں شفاء ہے اور حکماء نے شہد کے بے شمار فائدے لکھے ہیں نہار منہ چاٹنے سے بلغم دور کرتا ہے ، معدہ صاف کرتا ہے فضلات کو دفع کرتا ہے ، سدے کھولتا ہے ، معدہ کو اعتدال پر لاتا ہے دماغ کو قوت دیتا ہے حرارت غریزی کو قوی کرتا ہے شہد قوت باہ میں تحریک پیدا کرتا ہے مشانہ کے لئے مفید ہے سنگ مشانہ کو دور کرتا ہے اور پیشاب کے بند ہونے کو کھولتا ہے ۔

شہد کے فوائد

شہد فالج اور لقوہ کے لئے مفید ہے ، ریاح خارج کرتا ہے اور بھوک زیادہ لگاتا ہے ۔

شہد اور دودھ ہزاروں قسم کے پھولوں اور بوٹیوں کا عرق ہے اگر تمام جہان کے طبیب جمع ہو کر ایسا عرق تیار کرنا چائیں تو ہرگز نہیں کر سکتے ، یہ صرف اللہ ہی کی شان ہے کہ اپنے بندوں کو ایسا عمدہ اور کشیر الفوائد عرق پیدا فرمایا۔

نہار منہ 2 چمچ شہد 2 چمچ زیتون کا تیل اور ایک گلاس دودھ ایک بھرپور ناشتہ ہے انشاءاللہ کبھی معدہ کی بیماری نہیں ہوگی اور نہ ہی نا مردی ہو گی ۔

Share Button
قوت باہ کو نقصان پہنچانے والی اشیاء

قوت باہ کو نقصان پہنچانے والی اشیاء

قوت باہ کو نقصان پہنچانے والی اشیاء

جن کے کشرت استعمال سے بچا جائے

ہر قسم کے ترش پھل ، اچار ، چٹنی ، املی ، کیت ، سرکہ ،نیبو ، آم کی کھٹائی وغیرہ زیادتی کے ساتھ لال مرچ ، گرم مصالحہ جات زیادتی کے ساتھ چائے و کافی سونف اور ہرا دھنیا وغیرہ ۔

Share Button

مقوی باہ غذائیں

مقوی باہ غذائیں

مقوی باہ غذائیں

 غذا کا قوت مردمی سے گہرہ تعلق ہے جو خوراک ہم روز مرہ کھاتے ہیں وہی معدہ میں ہضم ہو کر خون پیدا کرتی ہیں اور پھر خون سے خصیوں کے عمل کے ذریعے منی یعنی مادہ تولید تیار ہوتا ہے ۔ جو زندگی کا جوہر خاص اور لزتوں کا سرچشمہ ہے لہزا ہمیشہ ایسی غذاؤں کا اہتمام رکھنا چائیے جن سے قوت مردمی ہمیشہ قائم رہے اور جسمانی قوت میں بھی فرق نہ آئے نیز دل و دماغ بھی کمزور نہ ہونے پائے اور باہ کو نقصان پہنچانے والی غذاؤں سے پرہیز کرنا چائیے ۔

ذیل میں ہر نوع کی مقوی باہ غذائیں تحریر کی گئی ہیں ۔

اجناس میں مقوی باہ غذائیں ۔

گہیوں ، چنا، باقلا،لوبیا،ماش،مونگ،چاول ،تل ، بنولہ ، مونگ پھلی وغیرہ ۔

نباتات میں مقوی باہ غذائیں ۔

پیاز ،لہسن،اروی،بھنڈی،شلغم،کدو،چقندر،گاجر،شکر قندی،آلو،رتالو،اروی،بھنڈی،سونٹھ،ادرک،سنگھاڑا خشک ، گڑ ،خشخاص،سبوس اسپغول،ڈھانک کا گوند، ببول کا گوند ،برگد کا دودھ ، ریش برگد وغیرہ ۔

پھلوں میں مقوی باہ غذائیں ۔

میٹھا آم ،انگور شیریں ،انار شیریں ،کیلا ،انجیر ،سیب،ناشپاتی ،امرود،خربوزہ وغیرہ ۔

خشک میوہ جات میں مقوی باہ غذائیں ۔

پستہ ، بادام،چلغوزہ ، مکھانہ ،چھوہارہ ،کھجور،کشمش،مویز منقیٰ، کھوپرا، زیتون ، اخروٹ، خوبانی ، فندق وغیرہ ۔

حیوانات میں مقوی باہ غذائیں ۔

تما حلال پرندوں کا گوشت اور ان کا مغز ، چوزہ مرغ ، کبوتر ، بٹیر ،تیتر،لواقاز، مرغابی بطخ اور ان کے انڈے لوا کنجشک صحرائی (چڑے) تازہ مچھلی

دودھ گائے بھینس ، دہی ، مکھن ، گھی ،جوان بکرے کے خصیے ، سری پائے ، کلیجی گودے دار ہڈیوں کی یخنی ۔

مصالحہ جات میں مقوی باہ غذائیں ۔

لونگ سیاہ ،دار چینی ،زعفران ،جاوتری ، جائفل ،الائچی ، ستاور، زیرہ  وغیرہ

Share Button
کیا بیوی کے پستان چومنے کی اجازت ہے ؟

کیا بیوی کے پستان چومنے کی اجازت ہے ؟

کیا بیوی کے پستان چومنے کی اجازت ہے ؟

عورت کے جسم میں بعض اعضاء ایسے ہیں کہ جن کے چومنے ، گدگدانے ،مسلنے سے عورت کو ایک خاص قسم کی لزت محسوس ہوتی ہے پس اگر کوئی شخص عورت کے پستان چومے یا چوسے تو وہ جائز ہے مگر پستان منہ میں لینے میں اس کا لحاظ نہایت ہی ضروری ہے کہ عورت کا دودھ منہ میں جا کر حلق میں نہ رہ جائے ۔ کیونکہ یہ مکروہ تحریمی ہے ۔

Share Button
ہمبستری کے وقت کے چند مختصر آداب

ہمبستری کے وقت کے چند مختصر آداب

ہمبستری کے وقت کے چند مختصر آداب

عورت اور پاک اور باوضو ہوں ۔

ہمبستری کا عمل شروع کرنے سے پہلے ﷽ پڑھ لیں اگر اول میں بھول جائیں تو بعد انزال یاد آنے پر کہ لیں ۔

ہمبستری سے قبل خوشبو لگانا بھی بہترین عمل ہے ۔

ہر قسم کی بدبو چاہے وہ میلے کچیلے ہونے کی وجہ سے ہو یا تمباکو نوشی کی وجہ سے ہو شہوت کو مردہ اور رغبت کو کو نفرت سے بدل دیتی ہے ۔ continue reading…

Share Button
کیا کھڑے ہو کر ہمبستری کر سکتے ہیں ؟

کیا کھڑے ہو کر ہمبستری کر سکتے ہیں ؟

کیا کھڑے ہو کر ہمبستری کر سکتے ہیں ؟

طب نبوی ﷺ میں صاحب قینیہ کے حوالے سے لکھا ہے کہ کھڑے ہو کر صحبت کرنے سے بدن کمزور اور ضعیف ہو جاتا ہے اور پیٹ بھرا ہونے کی حالت میں مجامعت نہیں کرنا چائیے اس سے اولاد کند ذہن پیدا ہوتی ہے ۔

کھڑے ہو کر صحبت کرنے سے رعشہ کا مرض ہو جاتا ہے ۔

Share Button